in

 کلدیپ بشنوئی بی جے پی میں ہوئے شامل

 کلدیپ بشنوئی بی جے پی میں ہوئے شامل  کلدیپ بشنوئی بی جے پی میں ہوئے شامل

NEW DELHHI, LAGATAR URDU  NEWS

آدم پور کے سابق ایم ایل اے کلدیپ بشنوئی آج بی جے پی میں شامل ہو گئے۔ دہلی میں انہوں نے وزیر اعلیٰ منوہر لال کی موجودگی میں بی جے پی میں شمولیت اختیار کی۔ انہوں نے جمعرات کو کانگریس چھوڑنے کے بعد ایم ایل اے کے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔ ان کے ساتھ ان کے بیٹے بھاویہ بشنوئی، ماں جسما دیوی اور بیوی رینوکا بشنوئی نے بھی بی جے پی میں شمولیت اختیار کی۔ کلدیپ نے واضح کیا ہے کہ وہ اور ان کا بیٹا مزید سیاست کریں گے۔ ان کی اہلیہ رینوکا الیکشن نہیں لڑیں گی۔

سابق وزیر اعلیٰ بھجن لال کے بیٹے کے طور پر سیاست شروع کرنے کے بعد کلدیپ بشنوئی نے کئی پارٹیاں بدلیں، لیکن انہیں یہ پسند نہیں آیا۔ اب دونوں باپ بیٹا زعفرانی رنگ میں رنگ کر سیاست کریں گے۔ ان کے بی جے پی میں شامل ہونے سے علاقے کے لوگوں میں امید ہے کہ بھجن لال کا چوہدری خاندان ایک بار پھر واپس آئے گا۔ کلدیپ بھیوانی سے ایم پی اور آدم پور سے ایم ایل اے تھے، لیکن انہیں اقتدار میں شامل ہونے کا موقع نہیں ملا۔

کلدیپ کے والد سابق وزیر اعلیٰ بھجن لال ہریانہ میں کانگریس کے محور تھے۔ ہریانہ کانگریس ان کے کہنے پر چلتی تھی۔ ایک وقت تھا جب بھجن لال وزیر اعلیٰ تھے اور طاقت آدم پور اور پنچکولہ دونوں سے چلتی تھی۔ آدھا ہریانہ آدم پور اور آدھا ہریانہ پنچکولہ جایا کرتا تھا۔ بھجن لال وزیر اعلیٰ نہ بن سکے تو سابق وزیر اعلیٰ بھوپندر سنگھ ہڈا نے کلدیپ کے بھائی چندر موہن کو نائب وزیر اعلیٰ بنایا۔ ڈپٹی چیف منسٹر رہتے ہوئے چندر موہن نے کانگریس میں اچھی اننگز کھیلی، لیکن فضا پریم نے انہیں ڈبو دیا۔ آخر کار چندر موہن کو نائب وزیر اعلیٰ کے عہدے سے استعفیٰ دینا پڑا۔
کلدیپ نے کہا کہ کانگریس اب اصولوں سے ہٹ گئی ہے۔ یہ شرپسندوں کی پارٹی بن چکی ہے۔ ایسے لوگ پارٹی چلا رہے ہیں جنہوں نے کبھی الیکشن نہیں لڑا۔ ہم لڑے بھی تو آج سے تیس سال پہلے۔ ملک بھر میں غلط فیصلے ہو رہے ہیں۔ کلدیپ نے کہا کہ کانگریس اب مکمل طور پر ختم ہونے والی ہے۔
جب کلدیپ سے پوچھا گیا کہ ای ڈی نوٹس کے دباؤ میں وہ ایسا قدم نہیں اٹھا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مجھے کبھی ای ڈی کا نوٹس نہیں ملا اور نہ ہی ای ڈی کا کوئی کیس ہے۔ انکم ٹیکس کے نوٹس آئے تھے جن میں سے بیشتر کی میعاد ختم ہو چکی ہے۔ میں نے اخلاقیات، دیانت اور اصولوں کی سیاست کی ہے۔

ہیمنت سورین کے معاملے میں الیکشن کمیشن میں 8 اگست کو سماعت

Written by Arif

ہیمنت سورین کے معاملے میں الیکشن کمیشن میں 8 اگست کو سماعت

ہیمنت سورین کے معاملے میں الیکشن کمیشن میں 8 اگست کو سماعت

ہائی کورٹ نے ریاست میں پروموشن پر لگائی پابندی، جانیں پورا معاملہ

ہائی کورٹ نے ریاست میں پروموشن پر لگائی پابندی، جانیں پورا معاملہ