in

 ٹیم انڈیا کے سامنے کیا چیلنج ہے؟ پاکستان سے مقابلہ بھی ہوگا، شیڈول اور سب کچھ جانیں۔

 ٹیم انڈیا کے سامنے کیا چیلنج ہے؟ پاکستان سے مقابلہ بھی ہوگا، شیڈول اور سب کچھ جانیں۔

Commonwealth Games 2022

LAGATAR URDU NEWS SPORT DESK

 کامن ویلتھ گیمز22ویں 28 جولائی سے 8 اگست تک انگلینڈ کے شہر برمنگھم میں منعقد ہونے جا رہے ہیں۔ جس میں بھارت کے 213 کھلاڑی حصہ لیں گے۔ اس سے قبل 215 ایتھلیٹس نے حصہ لینا تھا لیکن سٹار جیولن پھینکنے والے نیرج چوپڑا چوٹ کی وجہ سے باہر ہو گئے اور ٹرپل جمپ میں قومی ریکارڈ ہولڈر ایشوریہ بابو ڈوپ ٹیسٹ میں ناکام ہو گئیں۔ اس بار 213 کھلاڑیوں کی ٹیم میں ہندوستانی خواتین کرکٹ ٹیم بھی ہے۔ ہرمن پریت کور کی کپتانی میں پہلی بار خواتین کی ٹیم اس مہاکمب میں اترے گی۔

کامن ویلتھ گیمز کی تاریخ میں یہ پہلا موقع ہوگا جب خواتین کرکٹ کھیلیں گی۔ 1998 میں کرکٹ کو شامل کرنے سے پہلے صرف مردوں کی ٹیمیں حصہ لیتی تھیں۔ پھر ہندوستانی ٹیم اپنے گروپ میں تیسرے نمبر پر رہنے کے بعد باہر ہوگئی۔ فائنل میچ آسٹریلیا اور جنوبی افریقہ کے درمیان کھیلا گیا۔ افریقی ٹیم نے کینگروز کو شکست دے کر گولڈ میڈل جیت لیا۔ نیوزی لینڈ نے کانسی کے تمغے کے مقابلے میں سری لنکا کو شکست دی تھی۔

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) امریکہ کے لاس اینجلس میں ہونے والے 2028 کے اولمپک گیمز میں کرکٹ کو شامل کرنا چاہتی ہے۔ اس نے انگلینڈ اور ویلز کرکٹ بورڈ کے ساتھ مل کر کامن ویلتھ گیمز میں کرکٹ کو لانے کا منصوبہ بنایا۔ دونوں نے مل کر کامن ویلتھ گیمز ایسوسی ایشن کے ساتھ معاملہ اٹھایا۔ ایسوسی ایشن نے کہا کہ کرکٹ کی مقبولیت صرف برمنگھم میں نہیں بلکہ پوری دنیا میں ہے۔ آئی سی سی اور ای سی بی کو کامیابی ملی۔ کرکٹ کے مستقبل کا فیصلہ اگلے سال اولمپکس میں ہو گا۔ اس سے پہلے کامن ویلتھ گیمز میں کرکٹ کی کامیابی آئی سی سی کے لیے ایک امتحان کی طرح ہے۔

خواتین کرکٹ ٹورنامنٹ ٹی ٹوئنٹی فارمیٹ میں کھیلا جائے گا۔ آٹھ ٹیموں کو دو گروپس میں تقسیم کیا گیا ہے۔ گروپ اے میں آسٹریلیا، بھارت، پاکستان اور بارباڈوس شامل ہیں۔ ساتھ ہی گروپ بی میں انگلینڈ، نیوزی لینڈ، جنوبی افریقہ اور سری لنکا شامل ہیں۔ تمام میچز کو آئی سی سی نے تسلیم کیا ہے۔ ہر ٹیم اپنے گروپ میں ایک دوسرے کے خلاف ایک میچ کھیلے گی۔ گروپ میں سرفہرست دو ٹیمیں سیمی فائنل میں پہنچ جائیں گی۔ گروپ اے کی ٹاپ ٹیم سیمی فائنل میں گروپ بی میں دوسرے نمبر پر آنے والی ٹیم سے کھیلے گی۔ گروپ بی کی ٹاپ ٹیم سیمی فائنل میں گروپ اے میں دوسرے نمبر پر آنے والی ٹیم سے کھیلے گی۔ گولڈ میڈل کے لیے میچ سیمی فائنل جیتنے والی دونوں ٹیموں کے درمیان کھیلا جائے گا۔ اس کے ساتھ ہی ہارنے والی ٹیموں کے درمیان کانسی کے تمغے کا مقابلہ ہوگا۔
خواتین کے کرکٹ مقابلے کا آغاز 29 جولائی کو آسٹریلیا اور بھارت کے درمیان میچ سے ہوگا۔ ساتھ ہی 31 جولائی کو بھارت کا پاکستان سے مقابلہ ہوگا۔

تمام کرکٹ میچ ایجبسٹن میں کھیلے جائیں گے۔ اس گراؤنڈ پر 1973 میں خواتین کے پہلے ورلڈ کپ کا فائنل کھیلا گیا تھا۔ پھر انگلینڈ نے آسٹریلیا کو شکست دی۔
طلائی تمغے کی سب سے بڑی دعویدار آسٹریلیا کی خواتین ٹیم ہے۔ وہ خواتین کی کرکٹ پر حاوی ہیں۔ اس نے 2020 میں خواتین کا ٹی20 ورلڈ کپ اور 2022 میں او ڈی آئی ورلڈ کپ جیتا تھا۔ ہندوستانی ٹیم آسانی سے سیمی فائنل میں پہنچ سکتی ہے۔ بارباڈوس اور پاکستان کے خلاف ان کی فتوحات یقینی سمجھی جاتی ہیں۔ آسٹریلیا کے خلاف میچ سخت ہوگا۔ دو جیت کے ساتھ سیمی فائنل میں پہنچنے کے بعد ان کا مقابلہ انگلینڈ، نیوزی لینڈ، جنوبی افریقہ یا سری لنکا سے ہو سکتا ہے۔ سیمی فائنل سے ٹیم کے لیے راستہ کٹھن ہوگا۔
سونی پکچرز نیٹ ورکس کو ہندوستان میں کامن ویلتھ گیمز نشر کرنے کے حقوق حاصل ہیں۔ آپ اسے سونی ٹین 1، سونی ٹین 2، سونی ٹین 3، سونی سکس اور سونی ٹین 4 پر دیکھ سکتے ہیں۔ یہ ایپ اور ویب سائٹ پر بھی نشر کیا جائے گا۔

کان کنی لیز کیس: ریاستی حکومت کے ایس ایل پی پر کل سپریم کورٹ میں سماعت ہو سکتی ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Written by Arif

کان کنی لیز کیس: ریاستی حکومت کے ایس ایل پی پر کل سپریم کورٹ میں سماعت ہو سکتی ہے

کان کنی لیز کیس: ریاستی حکومت کے ایس ایل پی پر کل سپریم کورٹ میں سماعت ہو سکتی ہے

مسلمانوں کی پسماندگی کا ذمہ دار کون؟

مسلمانوں کی پسماندگی کا ذمہ دار کون؟